ای او بی آئی صنعتوں کیلئے سیلف اسیسمینٹ سکیم کا اعلان کریں

ای او بی آئی کی گورننگ باڈی میں پی ایچ ایم اے فیصل آباد کوبھی نمائندگی دی جائے۔
میاں فرخ اقبال،سینئر وائس چیئرمین پاکستان ہوزری مینوفیکچررز اینڈ ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن (نارتھ زون)
EOBI اور پی ایچ ایم اے عہدیداران پر مشتمل کمیٹی تشکیل دے دی گئی ہے تاکہ ایکسپورٹرزکے مسائل بروقت حل کئے جاسکیں۔
پی ایچ ایم اے دفتر میں ای او بی آئی ہیلپ ڈیسک کا قیام۔
اظہر حمید چیئرمین ایمپلائز اولڈ ایج بینیفٹس انسٹی ٹیوشن (EOBI)
فیصل آباد:( )پاکستان ہوزری مینوفیکچررز اینڈ ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن کے سینئر وائس چیئرمین میاں فرخ اقبال نے ایمپلائز اولڈ ایج بینیفٹس انسٹی ٹیوشن (ای او بی آئی) اور صنعتوں کے درمیان تنازعات کو ختم کرنے کا حل پیش کرتے ہوئے تجویز دی ہے کہ ای او بی آئی صنعتوں کیلئے ایمنسٹی اسکیم کا اعلان کرے اور کنٹری بیوشن کی مد میں گزشتہ سالوں کی ادائیگیوں سے استثنیٰ دیتے ہوئے 2021سے اسے لاگو کیاجائے تاکہ صنعتی ورکرز کی بہبود کیلئے بلا رکاوٹ کام کیا جاسکے اور عدالتی کیسز کو باہمی رضامندی سے نمٹایا جاسکے یہ بات انہوں نے چیئرمین ای او بی آئی اظہر حمید کے پاکستان ہوزری مینوفیکچررز اینڈ ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن دفتر کے دورہ کے موقع پر اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔
چیئرمین ای او بی آئی اظہر حمیدنے ایکسپورٹرز کے مسائل کے حل کیلئےEOBI اور پی ایچ ایم اے عہدیداران پر مشتمل کمیٹی تشکیل دے دی۔ انہوں ے کہا کہ کمیٹی کی سفارشات پر مکمل عمل کیا جائے گا۔ انہوں نے پی ایچ ایم اے دفتر میں EOBI Help Deskکے قیام کا بھی اعلان کیا تاکہ ایکسپورٹرز کو ان کی دہلیز پر ہر قسم کی سہولیات مہیا کی جاسکیں۔انہوں نے EOBIکارڈ کے حوالے سے کہا کہ یہ ہیلپ ڈیسک ورکر ز کے کارڈ بنانے میں مددگار ثابت ہوگا جب کہ دیگر مسائل بھی ہنگامی بنیادوں پر حل کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ آڈٹ کی آڑ میں صنعتکاروں کو ہراساں کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔
اس سے قبل خطبہ استقبالیہ پیش کرتے ہوئے سینئر وائس چیئرمین میاں فرخ اقبال نے پی ایچ ایم اے کا مختصر تعارف کروایا اور بتایا کہ پی ایچ ایم اےKnittedگارمنٹس برآمد کرنے والی سب سے بڑی اور منتخب تنظیم ہے۔ پاکستان بھر میں اس کی ممبر کمپنیوں کی تعداد 2000 سے زائد ہے اور اس ایسوسی ایشن کو ملک میں سب سے زیادہ روزگار کے مواقعے فراہم کرنے کا بھی اعزاز حاصل ہے۔ انہوں نے بتایا کہ پی ایچ ایم اے کے ممبر ان سالانہ 3.5 ارب ڈالر کا زرمبادلہ کماتے ہیں جبکہ ایسوسی ایشن کے دفاتر فیصل آباد کے علاوہ کراچی، لاہور اور سیالکوٹ میں بھی ہیں۔
میاں فرخ اقبال نے کہا کہ پی ایچ ایم اے ممبران کورضا کارانہ طور پر سیلف اسیسمینٹ سکیم کے تحت ای او بی آئی کی کنٹری بیوشن میں سالانہ 5%اضافہ کی تجویز دی جس سے نہ صرف ادارے کی کنٹری بیوشن میں اضافہ ہوگا بلکہ ایکسپورٹرز کو ادائیگی میں آسانی ہوگی۔ انہوں نے مزید کہا کہ رضا کارانہ ادائیگی کے بعد ممبران کا3سال تک آڈٹ نہیں کیا جائیگا اور ای او بی آئی کا ادارہ اسکیم کے تحت NOCجاری کر دیا کرے گا۔انہوں نے کہاکہ کرونا کی دوسری لہر سے امریکا، کینیڈا اور یورپ کی مار کیٹیں دوبارہ بند ہونے سے ہمارے ایکسپورٹ آرڈرز میں کمی آرہی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ کاٹن کی ملکی پیداوار کم ہونے سے یارن کی شدید قلت کے باعث اس کی قیمتیں بھی دن بہ دن بڑھ رہی ہیں اوراگر یہی صورتحال رہی تو ہمیں اپنے ایکسپورٹ آرڈرز کی تکمیل کرنا مشکل ہوجائے گا۔
سید ضیاء علمدار حسین سابقہ صدر ایف سی سی آئی نے کہا کہ کرونا کے باعث فیکٹریاں بند ہونے کے باوجود ایکسپورٹرز نے نہ صرف مزدوروں کو تنخواہیں دی بلکہEOBIاور سوشل سیکیورٹی کے کنٹری بیوشن بھی ادا کرتے رہے۔
میاں کاشف ضیاء نے کہا کہ آڈٹ کمپلائنسز کو پورا کرنے کے بغیر کوئی ایکسپورٹر ایکسپورٹ نہیں کر سکتا کیونکہ ورکرز کی تعداد کے مطابق انہیں آرڈرز دئیے جاتے ہیں۔
اجلاس میں محمد امجد خواجہ، ناہد عباس،حافظ راشد محمود، محمد زبیر، شاہین تبسم،محمد ادریس پنسوتا، حاجی طالب حسین،چوہدری نواز، میاں آصف اقبال و دیگر ممبران نے بھی شرکت کی۔
آخر میں معزز مہمان اظہر حمید چیئرمین EOBIکو ضیاء علمدار حسین نے پی ایچ ایم اے کی اعزازی شیلڈ پیش کی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں