غریب ومستحق افراد کو بلا سود قرض

فیصل آباد: اسسٹنٹ کمشنر سمندری فیصل سلطان نے کہا ہے کہ غریب ومستحق افراد کو بلا سود قرض حسنہ فراہم کرنا سماجی تنظیم”اخوت“کا عظیم کارنامہ ہے جس کی معاشرے میں کوئی مثال نہیں ملتی۔انہوں نے یہ بات فلاحی تنظیم اخوت کے زیراہتمام مستحق گھرانوں میں بلاسود قرضوں کی تقسیم کے لئے مسجد میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔اخوت کے عہدیداران بھی موجود تھے۔اس موقع پرمستحق خاندانوں میں 30 لاکھ روپے مالیت کے قرض حسنہ کے چیکس تقسیم کئے گئے۔اسسٹنٹ کمشنر نے کہا کہ فلاحی اور مہذب معاشرے کا تقاضا ہے کہ معاشی طور پر کمزور اور مستحق افراد کا ہاتھ تھاماجائے جس کے لئے سماجی تنظیم ”اخوت“نے اپنے فلاحی منصوبوں سے معاشرے میں ایسا عظیم انقلاب برپا کیا۔انہوں نے اسلامی تعلیمات واصولوں کے عین مطابق اخوت انتظامیہ کی عمدہ سوچ اور کامیاب فلاحی پروگرام کو سراہتے ہوئے کہا کہ قرض فراہم کرنے کے بعد سو فیصد ریکوری ہونا بے لوث خدمت اور نیک نیتی کا ثبوت ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستانی قوم بھرپور صلاحیتوں کی حامل ہے لیکن وسائل کی کمی کے باعث معاشی مسائل آڑے آتے ہیں جن کی فراہمی کے لئے اخوت نے قابل قدر بیڑااٹھایا ہے جس کے کامیاب نتائج سامنے آرہے ہیں۔انہوں نے قرض حسنہ حاصل کرنے والوں سے کہا کہ وہ انتہائی نیک نیتی اور دیانتداری سے محنت کرکے اپنے روزگار میں اضافہ کریں اور ایمانداری سے قرض حسنہ واپس کریں تاکہ دیگر بھی اس مائیکرو فنانس سکیم سے فائدہ اٹھا کر اپنے پاؤں پر کھڑے ہوسکیں۔انہوں نے خدمت خلق کے جذبے سے سرشار ہو کر خدمات انجام دینے والی اخوت کی پوری ٹیم کو مبارکباد دی اور کہا کہ تحصیل انتظامیہ بھی اس کارخیر میں ان کے شانہ بشانہ شریک رہے گی۔اخوت کے نمائندہ نے کہا کہ ڈاکٹر امجدثاقب نے غربت کے خاتمے کے لئے خود روزگار سکیم سے متعلق جو خواب دیکھا اس کو حقیقی معنوں میں حقیقت کا روپ ملا اور10ہزارروپے کے قرض حسنہ کی ادائیگی سے شروع ہونے والا سلسلہ اب کھرب روپے کی جانب گامزن ہے جس سے ملک بھر کے ہزاروں خاندان مستفید ہورہے ہیں۔انہوں نے اخوت کے زیر اہتمام ایجوکیشن پروگرام،تعلیم بالغان،زرعی قرضہ جات،ٹیوٹا اوردیگر فلاحی منصوبوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اخوت کا یہ انقلابی فلاحی سفر جاری رہے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں