فوج نے بغاوت کرتے ہوئے ملک میں ایک سال کیلیے ایمرجنسی قائم کردی

میانمارمیں فوج نے بغاوت کرتے ہوئے ملک میں ایک سال کیلیے ایمرجنسی قائم کردی اور آنگ سان سوچی کو گرفتار کرلیا۔
غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق میانمار میں فوج نے بغاوت کردی، صدر سمیت حکمراں جماعت کے اہم رہنماؤں کو بھی گرفتار کرلیا گیا ہے جبکہ میانمارمیں انٹرنیٹ اورمواصلاتی رابطوں میں بھی خلل پیدا ہونا شروع ہوگیا ہے۔

پارٹی ترجمان کے مطابق فوج نے میانمار کی ڈی فیکٹو رہنما آنگ سان سوچی کو گرفتار کرلیا ہے اور میانمار کے صدر کی بھی گرفتاری کی اطلاعات ہیں تاہم جس صورتحال کا سامنا ہے ایسا لگ رہا ہے کہ فوج نے بغاوت اور اقتدار پر قبضہ ہورہا ہے۔ دوسری جانب میانمار کی فوج نے اس بات کی تصدیق قومی ٹیلی ویژن پر کی جس میں کہا گیا کہ وہ ایک سال کیلیے ملک میں ہنگامی حالات کا اعلان کررہے ہیں جبکہ فوج نے کمانڈر ان چیف من آنگ ہلاینگ کو ملکی اختیارات سونپ دیے ہیں۔

واضح رہے کہ ملک میں نومبر میں ہونے والے متنازع انتخابی نتائج کے بعد میانمارمیں سخت کشیدگی تھی، انتخابات میں این ایل ڈی نے حکومت بنانے کے لیے درکار نشستیں حاصل کرلی تھیں تاہم فوج نے انتخابات کے نتائج کو تسلیم کرنے سے انکار کر دیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں