پاکستان میں کورونا ویکسین صرف 10 کروڑ افراد کو لگے گی

وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت فیصل سلطان نے بتایا کہ پاکستان میں تکنیکی اعتبار سے ویکسین 10 کروڑ افراد کو لگ سکتی ہے اور فرنٹ لائن ہیلتھ ورکرز ہماری ترجیح ہیں۔ ڈاکٹر فیصل سلطان کا کہنا تھا کہ تھا کہ پہلی کھیپ میں ملنے والی 5 لاکھ ویکسین صرف رجسٹرڈ افراد کو ہی لگائے جاسکیں گے۔ ویکسین 18سال سے اوپر کے افراد کولگائی جائے گی۔ رواں سال کے آخر تک 70 فیصد اہل افراد کے لیے ویکسین فراہم ہوں گی۔

انہوں نے کہا کہ سائنوفارم قابل بھروسہ ویکسین ہے اور 86 فیصد تک کارگرثابت ہوسکتی ہے۔ ویکسین لگنے کے بعد بخار اور بازو میں درد محسوس ہوگا۔ ویکسینیشن کے بعد 30 منٹ مریض کی نگہداشت بھی کی جائے گی۔ کسی پیچیدگی کی صورت میں ایمرجنسی میں منتقل کیا جائے گا۔

دوسری جانب ڈائریکٹر صحت کراچی ندیم شیخ نے کہا کہ عالمی ادارہ صحت کے مطابق ویکسین لگنے کے بعد بعض لوگوں کو ایک سے دو روز بخار آسکتا ہے۔ ڈائریکٹر صحت کا کہنا تھا کہ ویکسی نیشن سے سرخ دانے، آنکھ، ناک سے پانی بہنا اور درد بھی ہوسکتا ہے، جن افراد میں اینٹی باڈیز بنی ہوئی ہیں انہیں ویکسین کی ضرورت نہیں جب کہ جن افراد کا کورونا کا ٹیسٹ منفی آیا ہے وہ بھی ویکسین لگواسکتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں