‏سپریم کورٹ کا میڈیا کی آزادی پر ریفرنڈم

عدالت میں موجود جو صحافی سمجھتے ہیں کہ میڈیا آزاد ہے، ہاتھ کھڑا کریں، جسٹس قاضی فائز عیسی۔
کسی صحافی نے ہاتھ کھڑانا کیا۔
جو سمجھتے ہیں میڈیا آزاد نہیں ہاتھ کھڑا کریں: عدالت
عدالت میں موجود تمام میڈیا نے ہاتھ اٹھا دیا۔
‏جب میڈیا تباہ ہوتا ہے تو ملک تباہ ہوتا ہے جسٹس قاضی فائز عیسیٰ

ججز کو ایسی گفتگو سے احتراز کرنا چاہیے لیکن کیا کریں ملک میں آ ئیڈیل صورتحال نہیں، جسٹس مقبول باقر

کب تک خاموش رہیں گے، جسٹس مقبول باقر

ہر مخالف غدار اور حکومت حمایتی محب وطن بتایا جا رہا ہے جسٹس قاضی فائز
‏مجھے یہ کہنےمیں عار نہیں کہ میڈیا آزاد نہیں جسٹس قاضی فائز عیسیٰ

ملک میں کیسے میڈیا کو کنٹرول کیا جا رہا ہے، جسٹس قاضی فائز عیسیٰ

ملک میں کیسے اصل صحافیوں کو باہر پھینکا جا رہا ہے، جسٹس قاضی فائز عیسیٰ

ملک کو منظم طریقے سے تحت تباہ کیا جا رہا ہے فائز عیسیٰ

‏بلدیاتی حکومت کو ختم کرکے پنجاب حکومت نے ائین کی خلاف ورزی کی، جسٹس قاضی

اپنی مرضی کی حکومت آ نے تک اپ حکومتوں کو ختم کرتے رہیں گے، جسٹس قاضی فائز

جمہوریت کھوئی تو آ دھا ملک بھی گیا، جسٹس قاضی فائز

ہمیں نہیں پتہ کس نے کس کو اٹھالیا، نہیں معلوم تو حکومت گھر جائے جسٹس قاضی فائز
‏میڈیاپرپابندی لگانےوالے مجرم ہیں، انہں جیل میں ہونا چاہیے، آئین میڈیاآزادی کا ضامن ہے، میڈیاکنٹرول کرکےاپنی تعریف سن کرخوش ہونےوالوں کوماہرنفسیات کے پاس جاناچاہیے، جسٹس قاضی فائز عیسی
ملک حالت جنگ میں ہے، اٹارنی جنرل
ملک میں واقعی ایک جنگ جاری ہے, لیکن عوام کے خلاف،جسٹس مقبول باقر

اپنا تبصرہ بھیجیں